آگاہی سید امیر کلال

 
Listed Price: Rs. 200, US $ 14
Our Price: Rs. 120
Shipment charges will be applied.

How to ORDER?

 

Pages: 192

Year: 2010

Binding: Hard

Size: 23"x36"/16

ISBN: 978-969-9400-00-1

Publisher: Al-Fath Publications

آگاہی سیّد امیر کلالؒ

حضرت مولانا شہاب الدینؒ     مترجم: محمد نذیر رانجھا

Aagahi Syed Ameer Kulaal, Maulana Shahab-ud-Din, trans.: M. Nazir Ranjha

سلسلہ عالیہ نقشبندیہ مجددیہ کی سند میں ایک عظیم شخصیت قدوۃ السالکین حضرت خواجہ سیّد شمس الدین امیر کلال قدس سرہٗ بھی ہیں، جو اخلاص و للّٰہیت، عبادت و ریاضت، تقویٰ و پرہیز گاری کے مجسمہ تھے۔ حضرت مولانا شہاب الدین رحمۃ اللہ علیہ حضرت خواجہ سیّد امیر کلال قدس سرہٗ کے صاحبزادے، خلیفہ اور جانشین حضرت خواجہ امیر حمزہ رحمۃ اللہ علیہ کے نواسے تھے۔ وہ اپنے عہد کے شیخ و مرشد تھے اور اُس دَور کے اُمرا و حکام ان کے عقیدتمندوں میں شامل تھے۔

مصنف نے اس کتاب میں حضرت خواجہ سیّد امیر کلالؒ کے احوال و مناقب، اُن کے صاحبزادگان و خلفاء کا تذکرہ، اپنی والدہ محترمہ حضرت خاتون کلانؒ کے مناقب اور بعض اپنے حالات بھی قلمبند کیے ہیں۔ آخر میں سلسلہ خواجگان، سالکین کی قسمیں اور تلقینِ ذکر کی سند کے بارے مختصر و جامع تحریر پیش کی ہے۔ کتاب اپنے موضوع کا بنیادی مآخذ ہے۔

 

 


Table of Contents | فہرست

Table of Contents is in PDF Format.
 

 


Preface | حرفِ آغاز

زیرِ نظر کتاب حضرت مولانا شہاب الدین رحمۃ اللہ علیہ کی تصنیف ہے، جو حضرت خواجہ سیّد امیر کلال قدس سرہ (م ۷۷۲ھ/ ۱۳۷۰ھ) کے صاحبزادے، خلیفہ اور جانشین حضرت خواجہ امیر حمزہ رحمۃ اللہ علیہ (م ۸۰۸ھ/ ۱۳۹۸ء) کے نواسے تھے۔ وہ اپنے عہد کے شیخ و مرشد تھے اور اُس دَور کے اُمرا و حکام ان کے عقیدتمندوں میں شامل تھے۔ امیر تیمور (م ۸۰۷ھ/ ۱۴۰۵ء) کا بیٹا سلطان اولوغ بیگ (م ۸۵۳ھ/ ۱۴۴۹ء) اُن کا نیازمند تھا۔

مصنف نے اس کتاب میں حضرت خواجہ سیّد امیر کلالؒ کے احوال و مناقب کو مدوّن کیا ہے، جس کے ساتھ ان کے صاحبزادگان و خلفاء کا تذکرہ بھی شامل ہے۔ مصنف محترم نے اپنی والدہ محترمہ حضرت خاتون کلانؒ کے مناقب اور بعض اپنے حالات بھی قلمبند کیے ہیں۔ آخر میں سلسلہ خواجگان، سالکین کی قسمیں اور تلقینِ ذکر کی سند کے بارے مختصر و جامع تحریر پیش کی ہے۔ کتاب اپنے موضوع کا بنیادی مآخذ ہے اور صاحب رشحات عین الحیات نے بھی اسی سے حضرت سیّد امیر کلالؒ کے احوال و مناقب جمع کیے ہیں۔
یہ کتاب بار اوّل مقامات امیر کلال کے نام سے ۱۳۲۸ھ/ ۱۹۰۹ء میں بخارا سے طبع ہوئی۔ (دیکھئے: فہرست کتب فارسی مؤسسہ علوم شرقی لینن گراد، جلد ۱: ۳۱؛ برصغیر پاک و ہند میں تصوف کی مطبوعات، ص ۱۹۷)

بعدازاں حضرت ڈاکٹر غلام مصطفی خان رحمۃ اللہ علیہ (م ۱۴۲۶ھ/ ۲۰۰۵ء) نے اس کے مخطوطہ کی تصحیح فرمائی اور یہ ۱۳۸۱ھ/ ۱۹۶۱ء میں ادارہ مجددیہ، کراچی کی جانب سے منصہ شہود پر آیا۔ پھر زوار اکیڈمی پبلی کیشنز، کراچی نے بھی اسے زیورِ طبع سے آراستہ کیا۔

اس کا ایک مختصر اُردو ترجمہ محترم و مکرم جناب ڈاکٹر محمد ریاض مرحوم (م ۱۴۱۵ھ/ ۱۹۹۴ء) نے کیا تھا، جو سیّد شاہد حامد صاحب نے راولپنڈی سے طبع کیا تھا۔ (دیکھئے: ترجمہ ہائے متون فارسی بہ زبانہائے پاکستانی، ص ۲۰۳؛ برصغیر میں پاک و ہند میں تصوف کی مطبوعات، ص ۲۳)

احقر نے زیرِ نظر ترجمہ آگاہی سیّد امیر کلالؒ (فارسی) سے کیا ہے۔ اور اہلِ مطالعہ کے ذوق و سہولت کے پیشِ نظر کتاب میں ابواب بندی و عناوین کا اہتمام از خود کیا ہے۔ نیز بعض اشخاص و جگہوں کے نام کتاب رشحات کی مدد سے درست کیے ہیں۔ پھر بھی کوئی سقم یا کوتاہی نظر آئے تو عفو و درگذر کی درخواست ہے۔ 

محمد نذیر رانجھا

 

 


Index | اشاریہ
Index is in PDF Format.
محمد نذیر رانجھا
کی دیگر کتب

 

Related Titles