Listed Price: Rs. 250, US $ 23
Our Price: Rs. 150
Shipment charges will be applied.

How to ORDER?

 

Pages: 220

Year: 2010

Binding: Hard

Size: 23"x36"/16

ISBN: 978-969-9400-11-7

Publisher: Al-Fath Publications

ڈاکٹر گوہر نوشاہی بحیثیت محقق

محمد افضل صفی

Dr. Gohar Naushahi ba'haiseiyat Mohaqqiq, Muhammad Afzal Safee

ڈاکٹر گوہر نوشاہی کا شمار عہدِ موجود کے ممتاز محققین، مدوّنین اور دانش وروں میں ہوتا ہے۔ ڈاکٹر صاحب کے علمی اور تحقیقی کارنامے مختلف موضوعات اور ایک سے زیادہ زبانوں میں پھیلے ہوئے ہیں۔ بالخصوص اُردو، فارسی اور پنجابی زبانوں میں اُن کا کام قابلِ قدر ہے۔ اِس کتاب میں ڈاکٹر صاحب کی فارسی خدمات کی تفصیل بھی فراہم کی گئی ہے اور اُن کے مندرجات پر بھی روشنی ڈالی ہے۔ گوہر شناسی میں اس کتاب کی حیثیت سنگِ میل کی سی ہے۔ مصنف نے نہایت محنت اور عرق ریزی سے ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی زندگی اور اُن کے تحقیقی و تدوینی کارناموں کا جائزہ پیش کیا ہے۔ نتائج کے استخراج اور کتابوں کے تجزیے میں انھوں نے تحقیقی اور تنقیدی اُصولوں اور قاعدوں کی مکمل پاسداری کی ہے۔ 

محمد افضل صفی استادِ اُردو زبان و ادب کی حیثیت سے اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ ان کے دو شعری مجموعے صحرا سے گفتگو اور نگاہیں اُداس ہیں شائع ہو کر، قارئین سے دادِ تحسین قبول کر چکے ہیں۔

 

 


Table of Contents | فہرست

Table of Contents is in PDF Format.
 

 


Preface | ابتدائیہ

زیرِ نظر مقالہ پانچ ابواب پر مشتمل ہے۔ پہلا باب اُردو میں تحقیق کی روایت اور دبستانِ لاہور کی تشکیل کے حوالے سے لکھا گیا ہے۔ اس باب میں فاضل مقالہ نگار نے نہایت اجمال کے ساتھ اُردو میں تحقیق کی روایت، دبستانِ لاہور کی تشکیل، اہم محققین کے اُسلوب و انداز اور لاہور کے دبستانِ تحقیق کے امتیازات اور اختصاصات کو پیش کرنے کی کوشش کی ہے۔ فاضل مقالہ نگار کی اس رائے سے اختلاف نہیں کیا جا سکتا کہ پاکستان بھر کے ممتاز محققین دبستانِ لاہور کے خوشہ چین رہے ہیں اور ان کی تحقیقی کارگزاری میں اس دبستان کا رنگ واضح طور پر جھلکتا دکھائی دیتاہے۔

دوسرا باب ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی سیرت اور ان کی شخصیت کا آئینہ دار ہے۔ مقالہ نگار نے مستند مآخذ و مصادر کی مدد سے ڈاکٹر صاحب کے خاندانی پس منظر، اُن کی علمی و روحانی خدمات اور ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی تعلیم و تربیت کے مختلف مراحل و مدارج اور اُن کی زندگی کے ستّر سالہ سفر کو نہایت اختصار، مگر جامعیت کے ساتھ مرتّب کیا ہے۔ مقالہ نگار نے ڈاکٹر گوہر کے اساتذہ، اعزہ، تلامذہ اور دوستوں کے بیانات اور آرا سے ان کی شخصیت کی ہمہ رنگی کو پیش کرنے کی کامیاب کوشش کی ہے۔

تیسرے اور چوتھے ابواب میں ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی تحقیقی اور تدوینی خدمات کا تفصیل کے ساتھ جائزہ پیش کیا گیا ہے۔ ڈاکٹر صاحب کی جملہ تصانیف اور ان کی تدوینات کا الگ الگ تجزیہ کیا گیا ہے اور ان کے مندرجات کے حوالے سے ان کی قدر و قیمت متعین کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ فاضل مقالہ نگار نے محض اہلِ علم کے اقتباسات پیش نہیں کیے، بلکہ جا بہ جا اپنا ذاتی تاثر بھی پیش کیا ہے۔ ان کے ذاتی تاثر میں کہیں کہیں اختلاف کا پہلو بھی دکھائی دیتا ہے جو مقالے کو مدلّل مداحی کے اعتراض سے بچاتا ہے۔

پانچویں باب میں ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی فارسی خدمات کا جائزہ پیش کیا گیا ہے۔ ڈاکٹر صاحب کا تعلق ایک علمی اور روحانی خاندان سے ہے، اس لیے انھیں بچپن ہی سے عربی اور فارسی پڑھنے اور سیکھنے کا موقع ملا۔ فارسی سے ڈاکٹر صاحب کی وابستگی کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ انھوں نے ابتدائی عمر میں مبتدیوں کے لیے فارسی کا ایک قاعدہ لکھا۔ بعد میں ڈاکٹر صاحب کئی سال مشہد یونیورسٹی، ایران سے بہ طور ریسرچ سکالر اور استادِ ادبیاتِ اُردو و پاکستان شناسی وابستہ رہے۔ ڈاکٹر صاحب نے اگرچہ فارسی میں زیادہ کام نہیں کیا، تاہم ان کے جو مقالات ایران اور پاکستان کے فارسی جرائد میں شائع ہوئے اُن کی قدر و قیمت سے انکار ممکن نہیں۔ محمد افضل صفی نے ڈاکٹر صاحب کی فارسی خدمات کی تفصیل بھی فراہم کی ہے اور ان کے مندرجات پر بھی روشنی ڈالی ہے۔

محمد افضل صفی نے نہایت محنت اور عرق ریزی سے ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی زندگی اور اُن کے تحقیقی و تدوینی کارناموں کا جائزہ پیش کیا ہے۔ نتائج کے استخراج اور کتابوں کے تجزیے میں انھوں نے تحقیقی اور تنقیدی اُصولوں اور قاعدوں کی مکمل پاسداری کی ہے۔ ان کا اُسلوبِ نگارش سادہ مگر دلکش اور رواں ہے۔ مجھے یقین ہے کہ اربابِ علم اور اصحابِ تحقیق محمد افضل صفی کی اس محنت اور کاوش کو شرفِ پذیرائی بخشیں گے۔ ان شاء اللہ!

ڈاکٹر ارشد محمود ناشاد

 

 


Index | اشاریہ

Index is in PDF Format.

Related Titles